اکاؤنٹ کی حفاظت سے متعلق

آپ کے اکاؤنٹ کو محفوظ رکھنے میں مدد کرنے کے لیے، ہم درج ذیل بہترین طریقوں کی تجویز کرتے ہیں:

  • مضبوط پاس ورڈ کا استعمال کریں جسے آپ دوسری ویب سائٹس پر دوبارہ استعمال نہیں کرتے ہیں۔
  • دو عنصر کی توثیق کا استعمال کریں۔
  • ری سیٹ پاس ورڈ لنک یا کوڈ کی درخواست کرنے کے لیے ای میل اور فون نمبر درکار کریں۔
  • مشکوک لنکس سے محتاط رہیں اور اپنی لاگ ان معلومات درج کرنے سے پہلے ہمیشہ یقینی بنائیں کہ آپ twitter.com پر ہیں۔
  • اپنا صارف نام اور پاس ورڈ کبھی بھی ثالث فریقوں کو نہ دیں، خاص طور پر وہ جو آپ کو فالورز دلوانے، آپ کو پیسہ کما کر دینے کی یقین دہانی کرائیں یا آپ کی تصدیق کرنے کا کہیں۔
  • یقینی بنائیں کہ آپ کا کمپیوٹر سافٹ ویئر، بشمول آپ کا براؤزر، تازہ ترین اپ گریڈز اور اینٹی وائرس سافٹ ویئر کے ساتھ اپ ٹو ڈیٹ ہے۔
  • یہ دیکھنے کے لیے چیک کریں کہ کہیں آپ کا اکاؤنٹ غیر محفوظ تو نہیں ہو گیا ۔

پاس ورڈ کی مضبوطی

اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ کے لیے مضبوط اور منفرد پاس ورڈ بنائیں۔ آپ کو اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے وابستہ ای میل پتہ کے لیے بھی اتنا ہی مضبوط اور منفرد پاس ورڈ بنانا چاہیے۔

کرنے کی چیزیں:

  • یہ کریں کم از کم 10 حروف طویل پاس ورڈ بنائیں۔ طویل تر ہونا بہتر ہے۔
  • یہ کریں بڑے، چھوٹے حروف، نمبر اور علامتوں کا مرکب استعمال کریں۔
  • یہ کریں جس جس ویب سائٹ پر آپ جاتے ہیں ہر ایک کے لیے الگ پاس ورڈ استعمال کریں۔
  • یہ کریں اپنا پاس ورڈ محفوظ جگہ پر رکھیں۔ اپنی لاگ ان کی تمام معلومات کو محفوظ طریقے سے اسٹور کرنے کے لیے پاس ورڈ مینجمنٹ سافٹ ویئر استعمال کرنے پر غور کریں۔

نہ کرنے کی چیزیں:

  • یہ نہ کریں اپنے پاس ورڈ میں ذاتی معلومات استعمال نہ کریں جیسے فون نمبر، سالگرہ وغیرہ۔
  • یہ نہ کریں لغت کے عام الفاظ استعمال نہ کریں جیسے "iloveyou" ،"password" وغیرہ۔
  • یہ نہ کریں ترتیب جیسے "abcd1234"، یا کی بورڈ کی ترتیب جیسے "qwerty" استعمال نہ کریں۔
  • یہ نہ کریں کئی ویب سائٹوں پر ایک ہی پاس ورڈ دوبارہ استعمال نہ کریں۔ آپ کے ٹوئٹر اکاؤنٹ کا پاس ورڈ صرف ٹوئٹر کے لیے مخصوص ہونا چاہیے۔

مزید برآں، آپ اپنے اکاؤنٹ کی ترتیبات میں پاس ورڈ ری سیٹ تحفظ کو منتخب کر سکتے ہیں۔ اگر آپ اس باکس میں نشان لگاتے ہیں، تو پاس ورڈ بھولنے کی صورت میں اسے ری سیٹ کرنے کا لنک یا توثیقی کوڈ بھیجنے کے لیے آپ کواپن ای میل پتہ یا فون نمبر، یا اگر یہ دونوں آپ کے اکاؤنٹ سے منسلک ہوں تو اپنا ای میل پتہ اور اس کے بعد فون نمبر درج کرنے کے لیے کہا جائے گا۔ 

اپنے پاس ورڈ کی ری سیٹ کی ترتیبات کو کیسے تلاش کریں۔
  1. اپنے مین مینو پر جائیں۔
  2. ترتیبات اور پرائیویسی (Settings and privacy) کو تھپتھپائیں
  3. اکاؤنٹ (Account) کو تھپتھپائیں
  4. سیکورٹی (Security) کو تھپتھپائیں
  5. پاس ورڈ ری سیٹ تحفظ (Password reset protection) کو آن کر دیں۔
  1. اپنی ایپلی کیشن کی ترتیبات پر جائیں
  2. اکاؤنٹ (Account) کو تھپتھپائیں
  3. سیکورٹی (Security) کو تھپتھپائیں
  4. پاس ورڈ ری سیٹ تحفظ (Password reset protection) کو آن کر دیں
دو عنصر کی توثیق کا استعمال کریں



دو عنصر کی توثیق آپ کے اکاؤنٹ کے لیے سیکیورٹی کی ایک اضافی پرت ہے۔ صرف پاس ورڈ پر بھروسہ کرنے کے بجائے، دو عنصر کی توثیق اس بات کو یقینی بنانے میں مدد کے لیے ایک دوسری جانچ متعارف کراتی ہے کہ آپ، اور صرف آپ، اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ تک رسائی حاصل کر سکیں۔ صرف وہی لوگ جو آپ کے پاس ورڈ اور آپ کے موبائل فون (یا سیکیورٹی کی) دونوں تک رسائی رکھتے ہیں آپ کے اکاؤنٹ میں لاگ ان کر سکیں گے۔

مزید جاننے کے لیے دو-عنصر کی توثیق پر ہمارا مضمون پڑھیں۔



تسلی کر لیں کہ آپ twitter.com پر ہیں


فشنگ یہ ہوتی ہے جب کوئی آپ سے آپ کا ٹوئٹر صارف نام، ای میل پتہ یا فون نمبر اور پاس ورڈ لینے کے لیے آپ کو دھوکہ دینے کی کوشش کرتا ہے، عام طور پر تاکہ وہ آپ کے اکاؤنٹ سے سپیم بھیج سکیں۔ اکثر، وہ ایک ایسے لنک کے ساتھ آپ کو دھوکہ دینے کی کوشش کریں گے جو جعلی لاگ ان صفحہ پر جاتا ہے۔ جب بھی آپ سے اپنا ٹوئٹر پاس ورڈ درج کرنے کو کہا جائے تو اپنے براؤزر کے ایڈریس بار میں یو آر ایل پر جلدی سے نظر ڈال کر یہ یقینی بنائیں کہ آپ twitter.com پر ہی ہیں۔ اسکے علاوہ، اگر آپ کو ذاتی پیغام موصول ہوتا ہے (یہاں تک کہ کسی دوست کی طرف سے بھی) کسی ایسے یو آر ایل کے ساتھ جو عجیب لگ رہا ہو تو ہم تجویز کرتے ہیں کہ آپ اس لنک کو نہ کھولیں۔

فشنگ کی ویب سائٹیں اکثر ٹوئٹر کے لاگ ان صفحے کی طرح نظر آئیں گی، لیکن درحقیقت وہ ایسی ویب سائٹ ہوگی جو ٹوئٹر نہیں ہے۔ ٹوئٹر ڈومینز میں ہمیشہ بنیادی ڈومین کے طور پر /https://twitter.com ہوگا۔ ٹوئٹر لاگ ان صفحات کی کچھ مثالیں یہ ہیں:


اگر آپ کسی لاگ ان صفحہ کے بارے میں کبھی مطمئن نہ ہوں تو براہ راست twitter.com پر جائیں اور وہاں اپنی اسناد درج کریں۔ اگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ کے ساتھ فشنگ ہوئی ہے، تو جلد از جلد اپنا پاس ورڈ تبدیل کریں اور اضافی ہدایات کے لیے ہمارا غیر محفوظ اکاؤنٹ والا مضمون دیکھیں۔ 

ای میل کے ذریعے دھوکہ بازی کے بارے میں مزید معلومات کے لیے جعلی ٹوئٹر ای میلز کے بارے میں پڑھیں۔  



ہم آپ سے آپ کا پاس ورڈ مانگنے کے لیے رابطہ نہیں کریں گے



ٹوئٹر آپ سے کبھی بھی ای میل، ذاتی پیغام، یا جواب کے ذریعے اپنا پاس ورڈ فراہم کرنے کے لیے نہیں کہے گا۔

ہم آپ سے کبھی بھی کچھ ڈاؤن لوڈ کرنے یا ٹوئٹر سے ہٹ کر کسی ویب سائٹ پر سائن ان کرنے کے لیے نہیں کہیں گے۔ کبھی بھی کوئی منسلکہ نہ کھولیں اور نہ ہی کسی ای میل سے کوئی ایسا سافٹ ویئر انسٹال کریں جس کا دعویٰ ہو کہ یہ ہماری طرف سے ہے؛ وہ ہماری طرف سے نہیں ہوتا۔


اگر ہمیں شبہ ہوتی ہے کہ آپ کے اکاؤنٹ کے ساتھ فشنگ ہوئی ہے یا ہیک کیا گیا ہے، تو ہم ہیکر کو آپ کے اکاؤنٹ کا غلط استعمال کرنے سے روکنے کے لیے آپ کا پاس ورڈ دوبارہ ترتیب دے سکتے ہیں۔ اس صورت میں، ہم آپ کو twitter.com پاس ورڈ دوبارہ ترتیب دینے کا لنک ای میل کریں گے۔


اگر آپ اپنا پاس ورڈ بھول جاتے ہیں، تو آپ اسے اس لنک کے ذریعے دوبارہ ترتیب دے سکتے ہیں۔

 

نئے اور مشکوک لاگ ان الرٹس

اگر ہمیں کسی مشکوک لاگ ان کا پتہ چلتا ہے یا جب آپ پہلی بار کسی نئے ڈیوائس سے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ میں لاگ ان کرتے ہیں، تو ہم آپ کو ٹوئٹر ایپ کے اندر، یا ای میل کے ذریعے آپ کے اکاؤنٹ کے لیے سیکیورٹی کی اضافی پرت کے طور پر پش نوٹیفکیشن بھیجیں گے۔ لاگ اِن الرٹس ٹوئٹر براۓ iOS اور twitter.com ،Android اور موبائل ویب کے ذریعے صرف نئے لاگ ان کے بعد بھیجے جاتے ہیں۔

ان الرٹس کے ذریعے، آپ تصدیق کر سکتے ہیں کہ یہ آپ ہی تھے جنہوں نے ڈیوائس سے لاگ ان کیا تھا۔ اگر آپ نے ڈیوائس سے لاگ ان نہیں کیا تو آپ کو اپنے اکاؤنٹ کو محفوظ بنانے کے لیے فوری طور پر اپنا ٹوئٹر پاس ورڈ تبدیل کر کے نوٹیفکیشن میں درج مراحل پر عمل کرنا چاہیے۔ براہ مہربانی نوٹ کریں کہ نوٹیفکیشن میں درج مقام ایک اندازاً معین کیا گیا مقام ہے جو اس IP پتہ سے اخذ کیا گیا ہے جسے آپ نے ٹوئٹر تک رسائی کے لیے استعمال کیا، اور یہ آپ کے حقیقی مقام سے مختلف ہو سکتا ہے۔

نوٹ: اگر آپ پوشیدہ براؤزرز یا ایسے براؤزرز سے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ میں لاگ ان کرتے ہیں جن میں کوکیز غیر فعال ہیں، تو آپ کو ہر بار ایک الرٹ موصول ہوگا۔

ای میل پتہ اپ ڈیٹ کرنے کے الرٹس

جب کبھی آپ کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے وابستہ ای میل پتہ میں تبدیلی ہوگی، ہم آپ کے اکاؤنٹ پر پہلے استعمال شدہ ای میل پتہ پر ایک ای میل نوٹیفکیشن بھیجیں گے۔ آپ کے اکاؤنٹ کے غیر محفوظ ہونے کی صورت میں، یہ الرٹس آپ کو اپنے اکاؤنٹ پر دوبارہ کنٹرول حاصل کرنے کے لیے اقدامات کرنے میں مدد کریں گے۔
 

ٹوئٹر پر لنکس کی جانچ کرنا

بہت سے ٹوئٹر صارفین منفرد، مختصر لنک بنانے کے لیے، جنہیں ٹویٹ میں شیئر کرنا آسان ہوتا ہے، یو آر ایل شارٹنرز کا استعمال کرتے ہوئے لنک پوسٹ کرتے ہیں، جیسے کہ bit.ly یا TinyURL۔ تاہم، یو آر ایل شارٹنرز اصل ڈومین کو غیر واضح کر سکتے ہیں، جس سے یہ بتانا مشکل ہو جاتا ہے کہ لنک کہاں جاتا ہے۔

کچھ براؤزرز، جیسے کروم اور فائر فاکس، میں مفت پلگ ان ہوتے ہیں جو آپ کو ان پر کلک کیے بغیر مکمل شدہ یو آر ایل دکھاتے ہیں:

عام طور پر، براہ کرم لنکس پر کلک کرتے وقت احتیاط برتیں۔ اگر آپ کسی لنک پر کلک کرتے ہیں اور اپنے آپ کو غیر متوقع طور پر کسی ایسے صفحہ پر پاتے ہیں جو ٹوئٹر لاگ ان پیج سے ملتا جلتا ہو تو اپنا صارف نام اور پاس ورڈ درج نہ کریں۔ اس کے بجائے، twitter.com پر جائیں اور ٹوئٹر ہوم پیج سے براہ راست لاگ ان کریں۔
 

اپنے کمپیوٹر اور براؤزر کو اپ ٹو ڈیٹ اور وائرس سے پاک رکھیں

اپنے براؤزر اور آپریٹنگ سسٹم کو تازہ ترین ورژنز اور پیچ کے ساتھ اپ ڈیٹ رکھیں—اکثر مخصوص سیکورٹی خطرات سے نمٹنے کے لیے پیچز جاری کیے جاتے ہیں۔ وائرس، اسپائی ویئر اور ایڈویئر کے لیے اپنے کمپیوٹر کو باقاعدگی سے اسکین کرنا بھی یقینی بنائیں۔

اگر آپ ایک عوامی کمپیوٹر استعمال کر رہے ہیں تو اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ کام مکمل کرنے کے بعد ٹوئٹر سے سائن آؤٹ کر چکے ہیں۔

تیسری پارٹی کی ایپلی کیشنز کو احتیاط کے ساتھ منتخب کریں

ٹوئٹر پلیٹ فارم پر بیرونی ڈویلپرز کی بنائی بہت سی فریق ثالث ایپلی کیشنز ہیں جنہیں آپ اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ (اکاؤنٹس) کے ساتھ استعمال کر سکتے ہیں۔ تاہم، آپ کو ثالث فریق کی ایپلی کیشنز کو اپنے اکاؤنٹ تک رسائی دینے سے پہلے محتاط رہنا چاہیے۔

اگر آپ کسی فریق ثالث کی ایپلی کیشن کو اپنے اکاؤنٹ تک رسائی دینا چاہتے ہیں تو ہم تجویز کرتے ہیں کہ آپ صرف ٹوئٹر کے OAuth طریقہ کو استعمال کرتے ہوئے ایسا کریں۔ OAuth کنکشن کا ایک محفوظ طریقہ ہے اور آپ سے اپنا ٹوئٹر صارف نام اور پاس ورڈ ثالث فریق کو دینا درکار نہیں کرتا۔ آپ کو اس وقت خاص طور پر محتاط رہنا چاہیے جب آپ سے کسی ایپلی کیشن یا ویب سائٹ کو اپنا صارف نام اور پاس ورڈ دینے کے لیے کہا جائے، کیونکہ فریق ثالث ایپلی کیشنز کو Oauth کے ذریعے آپ کے اکاؤنٹ تک رسائی دینے کے لیے آپ کے صارف نام اور پاس ورڈ کی ضرورت نہیں ہے۔ جب آپ اپنا صارف نام اور پاس ورڈ کسی اور کو دیتے ہیں، تو ان کے پاس آپ کے اکاؤنٹ کا مکمل کنٹرول ہوتا ہے اور وہ آپ کو لاک آؤٹ کر سکتے ہیں یا آپ کے اکاؤنٹ کو معطل کرنے کا سبب بننے والے اقدامات کر سکتے ہیں۔ فریق ثالث کی ایپلیکیشنز کو جوڑنے یا منسوخ کرنے کے بارے میں جانیں۔

ہمارا مشورہ ہے کہ آپ فریق ثالث کی ایپلی کیشنز کا جائزہ لیں جنہیں وقتاً فوقتاً آپ کے اکاؤنٹ تک رسائی حاصل ہوتی ہے۔ آپ اپنے اکاؤنٹ کی ترتیبات میں ایپلی کیشنز ٹیب پر جا کر ان ایپلی کیشنز کی رسائی منسوخ کر سکتے ہیں جنہیں آپ نہیں پہچانتے ہیں یا جو آپ کی طرف سے ٹویٹ کر رہی ہیں۔

اس مضمون کو شیئر کریں