نفرت انگیز طرز عمل کے متعلق پالیسی

نفرت انگیز طرز عمل: آپ نسل، قومیت، آبائی تعلق، ذات، جنسی رجحان، جنس، جنسی شناخت، مذہبی وابستگی، عمر، معذوری یا سنگین بیماری کی بنیاد پر دوسرے لوگوں کے خلاف تشدد کو فروغ نہیں دے سکتے یا ان پر براہ راست حملہ نہیں کر سکتے یا انہیں دھمکا نہیں سکتے ہیں۔ ہم ایسے اکاؤنٹس کی اجازت بھی نہیں دیتے ہیں جن کا بنیادی مقصد ان درجہ بندیوں کی بنیاد پر دوسروں کو نقصان پہنچانا ہو۔

نفرت انگیز منظر کشی اور ڈسپلے کے نام: آپ اپنے پروفائل امیج یا پروفائل ہیڈر میں نفرت انگیز تصاویر یا علامتیں استعمال نہیں کر سکتے ہیں۔ آپ اپنے صارف نام، ڈسپلے نام یا پروفائل بائیو کا استعمال بدسلوکی پر مبنی رویے کے لیے نہیں کر سکتے ہیں، جیسے کہ ہدف بنا کر ہراساں کرنا یا کسی شخص، گروہ یا محفوظ قرار دی گئی درجہ بندی سے نفرت کا اظہار کرنا۔ 
 

استدلال
 

ٹوئٹر کا مشن ہر کسی کو خیالات اور معلومات بنانے اور ان کا اشتراک کرنے اور بغیر کسی رکاوٹ کے اپنی رائے اور عقائد کا اظہار کرنے کی طاقت دینا ہے۔ آزادی اظہار انسانی حق ہے – ہمارا یقین ہے کہ ہر ایک کی آواز ہے، اور اسے استعمال کرنے کا حق ہے۔ ہمارا کردار عوامی گفتگو کو پیش کرنا ہے، جو مختلف نقطہ نظر کی نمائندگی درکار کرتی ہے۔ 

ہم تسلیم کرتے ہیں کہ اگر لوگوں کو ٹوئٹر پر بدسلوکی کا سامنا کرنا پڑے تو یہ ان کی اپنے خیالات کا اظہار کرنے کی صلاحیت کو خطرے میں ڈال سکتا ہے۔ تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ لوگوں کے کچھ گروہوں کو غیر متناسب طور پر آن لائن بدسلوکی کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ ان میں خواتین، غیر سفید فام لوگ، ہم جنس پرست عورتیں، ہم جنس پرست، دو جنسی، ٹرانسجینڈر، جنسی طور پر غیر فیصلہ شدہ، انٹرسیکس، غیر جنسی افراد، پسماندہ اور تاریخی طور پر کم نمائندگی کی حامل کمیونٹیز شامل ہیں۔ ان لوگوں کے لیے جو کم نمائندگی والے متعدد گروہوں کے ساتھ شناخت رکھتے ہیں، بدسلوکی زیادہ عام، نوعیت میں زیادہ شدید اور زیادہ نقصان دہ ہو سکتی ہے۔

ہم نفرت، تعصب یا عدم رواداری سے تحریک پانے والی بدسلوکی کا مقابلہ کرنے کے لیے پرعزم ہیں، خاص طور پر وہ بدسلوکی جو ان لوگوں کی آوازوں کو خاموش کرنے کی کوشش کرتی ہے جو تاریخی طور پر پسماندہ رہے ہیں۔ اس وجہ سے، ہم ایسے رویے کی ممانعت کرتے ہیں جو افراد یا گروہوں کو ان کے کسی محفوظ درجہ بندی کا رکن سمجھے جانے کی بنیاد پر بدسلوکی کا نشانہ بنائے۔  

اگر آپ ٹوئٹر پر کوئی ایسی چیز دیکھیں جو آپ کے خیال میں ہماری نفرت انگیز طرز عمل کے متعلق پالیسی کی خلاف ورزی کرتی ہو تو براہ مہربانی ہمیں اس کی اطلاع دیں۔

 

اس کا اطلاق کب ہوتا ہے 
 

ہم ان اکاؤنٹس کےخلافرپورٹس کا جائزہ لیں گے اور ان کے خلاف کارروائی کریں گے جو کسی فرد یا لوگوں کے گروہ کو مندرجہ ذیل میں سے کسی طرزعمل کا نشانہ بناتے ہیں، چاہے ایسا ٹویٹس میں ہو یا ذاتی پیغامات میں۔ 
 

تشدد آمیز دھمکیاں

ہم ایسے مواد کی ممانعت کرتے ہیں جس میں کسی قابل شناخت ہدف کے خلاف پرتشدد دھمکیاں ہوں۔ پرتشدد دھمکیاں ایسی چوٹ پہنچانے کے ارادے کے اعلانیہ بیانات ہوتے ہیں جن کے نتیجے میں سنگین اور دیرپا جسمانی نقصان ہوگا، جہاں کسی فرد کی موت سکتی ہے یا وہ شدید زخمی ہو سکتا ہے، جیسے، "میں تمہیں مار ڈالوں گا۔"

نوٹ: پرتشدد دھمکیوں کے خلاف ہماری پالیسی ہے کہ ان کو قطعی طور پر برداشت نہیں کیا جائے گا۔ پرتشدد دھمکیوں کا اشتراک کرتے پائے جانے والوں کو ان کے اکاؤنٹ کی فوری اور مستقل معطلی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ 
 

کسی شخص یا لوگوں کے گروہ کو شدید نقصان پہنچانے کی خواہش، امید کرنا یا اسکی مانگ کرنا

ہم ایسے مواد کی ممانعت کرتے ہیں جو کسی پوری کی پوری محفوظ درجہ بندی اور/یا ایسے افراد جو اس درجہ بندی کے رکن ہوں کے خلاف موت، شدید جسمانی نقصان یا سنگین مرض کی خواہش کرے، امید ظاہر کرے، اس کو فروغ دے، اس پر اکساۓ یا اس کا اظہار کرے۔ اس میں یہ شامل ہیں لیکن ان تک ہی محدود نہیں: 

  • امید کرنا کہ ایک پورے کی پوری محفوظ درجہ بندی اور/یا افراد جو اس درجہ کے رکن ہو سکتے ہیں کسی سنگین بیماری سے مر جائیں، مثلاً، "امید کرتا ہوں کہ تمام [قومیت] کو COVID ہو جائے اور وہ مر جائیں۔"
  • کسی کے لیے یہ خواہش کرنا کہ وہ کسی سنگین حادثے کا شکار ہو جاۓ، جیسے، "میری خواہش ہے کہ اگلی بار جب تم اپنی زبان چلاؤ تو تم پر کوئی گاڑی چڑھ جاۓ۔"
  • یہ کہنا کہ افراد کا کوئی گروہ شدید جسمانی نقصان کا مستحق ہے، جیسے، "اگر یہ [گالی] افراد کا گروہ چپ نہیں ہوتا ہے، تو انہیں گولی مار دینی چاہیے۔"
  • کسی فرد یا گروہ کو کسی محفوظ درجہ بندی کا رکن مانے جانے کی بنیاد پر دوسروں کو ان کے خلاف تشدد کی ترغیب دینا، جیسے، "میں کسی [نسلی گالی] کو گھونسہ مارنے کے موڈ میں ہوں، میرے ساتھ کون کون ہے؟"
     

اجتماعی قتل، پرتشدد واقعات، یا تشدد کے مخصوص ذرائع کے حوالے دینا جہاں محفوظ گروہ بنیادی ہدف یا متاثرین رہے ہوں۔

ہم ایسے افراد یا گروہوں کو ایسے مواد کے ساتھ نشانہ بنانے کی ممانعت کرتے ہیں جن میں ایسے تشدد یا پرتشدد واقعات کا حوالہ موجود ہو، جہاں ہراساں کرنا مقصد تھا اور کوئی محفوظ درجہ بندی اولین ہدف یا متاثرین تھے۔ اس میں ایسا میڈیا یا متن شامل ہے، لیکن اس تک ہی محدود نہیں، جس میں ان کا حوالہ ہو یا ان کی عکاسی کی گئی ہو:

  • نسل کشی، (مثال کے طور پر، ہولوکاسٹ)؛
  • بے قاعدہ سزائے موت دیا جانا۔
     

محفوظ درجہ بندیوں کے خلاف اکسانا
 

ہم ایسے اشتعال انگیز طرزعمل کی ممانعت کرتے ہیں جو محفوظ درجہ بندیوں سے تعلق رکھنے والے افراد یا لوگوں کے گروہوں کو نشانہ بناتا ہو۔ اس میں وہ مواد شامل ہے جس کا مقصد ہو کہ:

  • کسی محفوظ درجہ بندی کے بارے میں خوف کو بھڑکانا یا خوفناک دقیانوسی تصورات پھیلانا، بشمول یہ کہنا کہ کسی محفوظ درجہ بندی کے ارکان کے خطرناک یا غیر قانونی سرگرمیوں میں حصہ لینے کا امکان زیادہ ہوتا ہے، جیسے کہ "تمام [مذہبی گروہ کا نام] دہشت گرد ہیں۔"
  • کسی پلیٹ فارم پر یا اس سے باہر کسی محفوظ درجہ بندی کے اراکین کو ہراساں کرنے کے لیے دوسروں کو اکسانا، مثلاً، "میں ان [مذہبی گروہ کا نام] کی اس سوچ سے تنگ آگیا ہوں کہ وہ ہم سے بہتر ہیں، اگر آپ میں سے کوئی کسی کو [مذہبی گروہ کی مذہبی علامت] پہنے ہوئے دیکھے تو، اسے پکڑ کر ان پر سے اتار دے اور تصویریں پوسٹ کرے!"
  • محفوظ درجہ بندی کے رکن سمجھے جانے کی وجہ سے کسی فرد یا گروہ کے معاشی ادارے سے تعاون سے انکار کر کے استحصال کرنے کے لیے دوسروں کو اکسانا،مثلاً، "اگر آپ [مذہبی گروہ کا نام] کے اسٹور پر جاتے ہیں، تو آپ ان [گالی] کا ساتھ دے رہے ہیں، ان [مذہب کی بنیاد پر گالی] کو اپنا پیسہ دینا بند کریں۔" اس میں سیاسی نوعیت کا مواد شامل نہیں ہو گا، جیسے سیاسی تبصرہ یا بائیکاٹ یا احتجاج سے متعلق مواد۔

خیال رہے کہ کسی محفوظ درجہ بندی کے خلاف تشدد پر اکسانے پر مبنی مواد کسی شخص یا لوگوں کے گروہوں کو شدید نقصان پہنچانے کی خواہش، امید، یا اس کی مانگ کے تحت ممنوع ہے۔

ہم ایسے افراد اور گروہوں کو ایسے مواد کے ساتھ نشانہ بنانے کی ممانعت کرتے ہیں جس کا مقصد کسی محفوظ زمرے کے بارے میں خوف بھڑکانا یا خوفناک دقیانوسی تصورات پھیلانا ہو، بشمول یہ کہنا کہ کسی محفوظ درجہ بندی کے اراکین کے خطرناک یا غیر قانونی سرگرمیوں میں حصہ لینے کا زیادہ امکان ہے، مثلاً، "تمام [مذہبی گروہ کا نام] دہشت گرد ہیں۔" 
 

بار بار دی جانے والی اور/یا غیر متفقہ گالیاں، لقب، نسل پرست اور جنس پرست جملے، یا دیگر مواد جو کسی کی تحقیر کرتے ہیں

ہم دوسروں کو بار بار گالیاں، معنی خیز جملوں یا دیگر مواد کے ساتھ نشانہ بنانے کی ممانعت کرتے ہیں جن کا مقصد کسی محفوظ درجہ بندی کو انسانیت کے درجے سے خارج کرنا، نیچا دکھانا یا ان پر منفی یا نقصان دہ دقیانوسی تصورات مسلط کرنا ہو۔ اس میں ہدف بنا کر ٹرانس جینڈر افراد کی غلط جنس پیش کرنا یا ان کی مرضی کے خلاف انہیں انکے پیدائش کے نام سے پکارنا شامل ہے۔ ہم لوگوں کے گروہ کو ان کے مذہب، ذات، عمر، معذوری، سنگین بیماری، قومی نسبت، نسل، قبیلے، جنس، صنفی شناخت یا جنسی رجحان کی بنیاد پر انسانیت کے درجے سے خارج کرنے کی بھی ممانعت کرتے ہیں۔ بعض صورتوں میں، جیسے کہ (لیکن ان تک محدود نہیں) شدید، بار بار گالیوں، لقب، یا نسل پرست/جنس پرست جملوں کا استعمال جہاں ان بنیادی مقصد دوسروں کو ہراساں کرنا یا ڈرانا ہوتا ہے، ہم درکار کر سکتے ہیں کہ ٹویٹ کو ہٹا دیا جائے۔ دیگر معاملات میں، جیسے کہ (لیکن ان تک محدود نہیں) کم شدید، تنہا استعمال جہاں بنیادی مقصد دوسروں کو ہراساں کرنا یا ڈرانا ہو، ہم ٹویٹ کے دیکھے جانے کو محدود کر سکتے ہیں جیسا کہ ذیل میں مزید بیان کیا گیا ہے۔
 

نفرت انگیز منظر کشی

ہم لوگوز، علامتوں یا ایسی تصاویر کو نفرت انگیز منظر کشی سمجھتے ہیں جن کا مقصد دوسروں کے خلاف ان کی نسل، مذہب، معذوری، جنسی رجحان، صنفی شناخت یا قبائلی/قومی نسبت کی بنیاد پر دشمنی اور بغض کو فروغ دینا ہے۔ نفرت انگیز منظر کشی کی کچھ مثالوں میں یہ شامل ہیں، لیکن ان تک ہی محدود نہیں ہیں:

  • نفرت انگیز گروہوں سے تاریخی طور پر وابستہ علامتیں، جیسے، نازی سواستیکا؛
  • ایسی تصاویر جو دوسروں کو کمتر انسان ظاہر کریں، یا نفرت انگیز علامتوں کو شامل کرنے کے لیے تبدیل شدہ تصاویر، جیسے کہ جانوروں کی خصوصیات کو شامل کرنے کے لیے افراد کی تصاویر میں تبدیلی کرنا؛ یا
  • نفرت انگیز علامات یا اجتماعی قتل کے حوالہ جات کو شامل کرنے کے لیے تبدیل کی گئی تصاویر جن میں محفوظ درجہ بندی کو نشانہ بنایا گیا ہو، جیسے کہ ہولوکاسٹ کے حوالے سے داؤد کے بیجز والے پیلا ستارے کو شامل کرنے کے لیے افراد کی تصاویر میں تبدیلی۔

لائیو ویڈیو، اکاؤنٹ بائیو، پروفائل یا ہیڈر امیجز میں نفرت انگیز منظر کشی کرنے والے میڈیا کی اجازت نہیں ہے۔ دیگر تمام مثالوں کو حساس میڈیا کے طور پر نشان زد کیا جانا چاہیے۔ اسکے علاوہ، کسی فرد واحد کو غیر مطلوب نفرت انگیز تصاویر بھیجنا ہماری بدسلوکی پر مبنی رویے سے متعلق پالیسی کی خلاف ورزی ہے۔ 
 

کیا کسی مواد کے ٹوئٹر کے قوانین کی خلاف ورزی ہونے کے لیے میرا اس کا ہدف بنا ہونا ضروری ہے؟
 

تنہا دیکھے جانے پر کچھ ٹویٹ نفرت انگیز لگ سکتے ہیں، لیکن کسی وسیع گفتگو کے تناظر میں دیکھی جانے پر ہو سکتا ہے کہ وہ ایسی نہ ہوں۔ مثال کے طور پر، ممکن ہے کہ کسی محفوظ درجہ بندی کے ارکان ایک دوسرے ایک دوسرے کا حوالہ دینے کے لیے ایسی اصطلاحات کا استعمال کرتے ہوں جنہیں عام طور پر گالیاں سمجھا جاتا ہے۔ اتفاق رائے سے استعمال ہونے پر ان اصطلاحات کا مقصد بدسلوکی نہیں ہوتا، بلکہ ان اصطلاحات کی بحالی کا ذریعہ ہوتا ہے جو تاریخی طور پر افراد کو نیچا دکھانے کے لیے استعمال کی جاتی تھیں۔  

جب ہم اس قسم کے مواد کا جائزہ لیتے ہیں، تو یہ واضح نہیں ہو پاتا کہ آیا اس کا مقصد کسی فرد کو اس کی محفوظ حیثیت کی بنیاد پر زیادتی کا نشانہ بنانا ہے، یا یہ کسی متفقہ گفتگو کا حصہ ہے۔ سیاق و سباق کو سمجھنے میں ہماری ٹیموں کی مدد کرنے کے لیے، ہمیں بعض اوقات نشانہ بنائے جانے والے شخص سے براہ راست جاننے کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ ہمارے پاس کوئی بھی نفاذ عمل کی کارروائی کرنے سے پہلے درکار معلومات موجود ہیں۔

نوٹ: ہماری طرف سے کارروائی کرنے کے لیے افراد کا کسی مخصوص محفوظ زمرے کا رکن ہونا ضروری نہیں ہے۔ ہم لوگوں سے کبھی بھی کسی محفوظ زمرے میں رکنیت کو ثابت یا غلط ثابت کرنے کے لیے نہیں کہیں گے اور ہم ان معلومات کی چھان بین بھی نہیں کریں گے۔ 
 

نتائج
 

اس پالیسی کے تحت، ہم ایسے طرزعمل کے خلاف کارروائی کرتے ہیں جس کے ذریعہ نفرت انگیز طریقہ سے لوگوں یا مکمل محفوظ زمرے کو نشانہ بنایا گیا ہو، جیسا کہ اوپر بیان کیا گیا ہے۔ نشانہ بنانا کئی طریقوں سے ہو سکتا ہے، مثال کے طور پرکسی فرد کا تذکرہ، بشمول تصویر، کسی کے پورے نام سے حوالہ دینا وغیرہ۔

اس پالیسی کی خلاف ورزی پر جرمانے کا تعین کرتے وقت، ہم متعدد عوامل پر غور کرتے ہیں جن میں خلاف ورزی کی شدت اور کسی فرد کے قوانین کی خلاف ورزیوں کا سابقہ ریکارڈ شامل ہیں، لیکن ان تک محدود نہیں۔ مندرجہ ذیل ایسے مواد کے لیے ممکنہ نفاذ عمل کے اختیارات کی فہرست ہے جو اس پالیسی کی خلاف ورزی کرتا ہو:

  • جوابات میں ٹویٹ کو نیچے کی درجہ بندی کرنا، سوائے اس کے کہ جب صارف ٹویٹ کے مصنف کو فالو کر رہا ہو۔
  • ٹویٹس کو مقبول تلاش کے نتائج اور/یا ایسے صارفین کے لیے ٹائم لائنز میں اضافہ کے لیے نااہل بنانا جو ٹویٹ کے مصنف کو فالو نہ کر رہے ہوں۔
  • ای میل یا ان-پروڈکٹ تجاویز میں سے ٹویٹس اور/یا اکاؤنٹس کو نکال دینا۔ 
  • ٹویٹ ہٹائے جانا درکار کرنا۔
    • مثال کے طور پر، ہم کسی کو خلاف ورزی کرنے والے مواد کو ہٹانے اور دوبارہ ٹویٹ کر پانے سے پہلے کچھ مدت صرف پڑھنے کے موڈ میں گزارنے کا کہہ ہیں۔ اس کے بعد ہونے والی خلاف ورزیاں صرف پڑھنے کی مدت میں اضافے کا باعث بنیں گی اور اس کے نتیجے میں بالاخر مستقل معطلی بھی ہو سکتی ہے۔
  • ان اکاؤنٹس کو معطل کرنا جن کے بارے میں ہم نے یہ تعین کیا ہے کہ، جیسا اس پالیسی میں بیان کردہ ہے، اس کے مطابق وہ نفرت انگیز طرزعمل میں ملوث ہیں یا جنہوں نے پرتشدد دھمکیوں کا اشتراک کیا ہے۔

ہمارے نفاذ عمل کے اختیارات کی حد کے بارے میں مزید جانیں۔ 

اگر کسی کو لگے کہ ان کا اکاؤنٹ غلطی سے معطل کر دیا گیا ہے، تو وہ اپیل کر سکتے ہیں۔

اس مضمون کو شیئر کریں